مری میں نیا اتحاد۔مسلم لیگ ن اور تحریک انصاف مشکل میں پڑ گئے

مری کے عوام اپنے مسائل کے حل کیلئے نیا اتحاد بنانے کیلئے سرگرم ہوگئے ۔ مستنند زرائع کے مطابق مری کہوٹہ سے تمام سیاسی پارٹیوں سے اہم شخصیات کو جوڑا جا رہا ہے ۔اس اتحاد میں تمام لوگ ایک بات پر متفق ہو گئے ہیں کہ نظریات کے نام پر ہم اپنے حلقے کو مزید پسماندہ نہیں رکھ سکتے اور تمام سیاسی پارٹیاں جوٹھے وعدے دوران الیکشن کرتے ہیں ۔ شاید خاقان عباسی کا تیس سالہ دور حلقے میں لوگوں کو بیروزگاری کے علاوہ کچھ نہ دے سکا اور نہ ہی جدید دور کے تقاضوں کے مطابق کوئ بھی تعلیمی ادار ہ بنایا گیا اور موجودہ ممبران اسمبلی نے بھی حلقے کی عوام کو بلکل ہی مایوس کر دیا ۔ اس صورت حال کے پیش نظر ایک سیاسی شخصیت کی رہائش گاہ بنی گالہ میں اہم میٹنگ ہوئ اور کچھ معملات پر تمام لوگوں میں اتفاق پایا گیا ۔ اگر یہ گرینڈ الائنس بن گیا تو حلقے کے بڑے بڑے نام اپنی اپنی پارٹی کے امیدواروں کو ووٹ دیتے نظر نہیں آتے ۔ اور آزاد حثیت میں کھڑے امیدواروں کو سپوڑٹ کریں گئے ۔ حلقے میں تمام سیاسی پاڑٹیوں کی کارکردگی مایوس کن اور سیاسی ورکرز کو صرف نعرے اور ووٹ ڈالنے کے لئے لولی پاپ دئے جاتے ہیں ۔ کہوٹہ مری کلر کے بڑے بڑے نام اس اتحاد کا حصہ ہیں ۔ یہ اتحاد پہلے بلدیاتی الیکشن میں اپنے امیدوار اتارے گا ۔ یہ اتحاد مسلم لیگ ن اور تحریک انصاف کے مقابلے میں دونوں جماعتوں سے بڑی قوت ثابت ہو سکتا ہے ۔ حلقے کے لوگ دونوں جماعتوں کی مقامی لیڈر شپ سے نالاں ہیں ۔ دونوں جماعتوں کے کچھ سیاسی رہنما اس میں کلیدی کردار ادا کر رہے ہیں ۔ یہ اتحاد جلد منظر پر آ سکتا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں