83

ہلدی کے جادوئی فائدے

ِطبی ماہرین کے مطابق ہلدی نہ صرف دل کوصحتمند رکھتی ہے بلکہ ہلدی بلڈپریشر کو بھی معمول پر رکھتی ہے. ہلدی خون کی نالیوں میں کلوٹنگ (خون کے لوتھڑے ) بننے کے عمل کو بھی روکتی ہے. ایک تحقیق کے مطابق اگرروزانہ 500 ملی گرام سرکیومن سپلیمنٹ استعمال کیا جائے تو مضر صحت کولیسٹرول میں 12فیصد تک کمی آ سکتی ہے. ہلدی کاباقاعدہ استعمال کئی امراض سے بچاؤ کا ذریعہ ہے۔

ماہرین کے مطابق ’’آیوروید‘‘ میں ہلدی جوڑوں کے درد کیلئے بہترین غذاہے. ہلدی میں اینٹی انفلیمیٹری عناصر، سوزش کم کرنے میں بہت مدد دیتے ہیں. یہ عناصر(آسٹیو پوروسیس) ہڈیوں کے بھربھرے پن کو روکتے ہیں. ہلدی کینسر‘سوزش اور امراض قلب میں اکسیر ہے ۔

ایک اور تحقیق سے ثابت ہواہے کہ ہلدی میں موجود “سرکیومن” دمے‘ سسٹک فائبروسس اور پھیپھڑوں کے کینسر سے محفوظ رکھتاہے. سرکیومن بنیادی طور پرکینسر کے خلیات کی بقاء ‘ پھیلاؤ‘ حملے میں اہم کردار ادا کرتا ہے. اوررگیں بناکررسولی کے مزیدپھیلنے کے تمام راستوں کو بندکردیتاہے.

جسم میں ہونے والی سوزش کو کئی امراض کی جڑ قرار دیا جاتا ہے جبکہ ہلدی میں جسمانی سوزش کم کرنے والے تمام اجزاء موجود ہوتے ہیں. ہلدی میں شامل سرکیومن کینسر سمیت کئی امراض سے بچاتاہے، ان امراض میں دمے‘ گنٹھیا اوردیگرکئی امراض شامل ہیں.

پس اس سے ثابت ہوتا ہے کہ سرکیومن ہر طرح کے کینسر کی رسولیوں کے پھیلائو کو روکتاہے. لہٰذا اسی وجہ سے ہلدی کا استعمال ہمیں مختلف موذی امراض سے قدرتی طورپر محفوظ رکھتا ہے.

فیس بک کے تبصرے

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں