56

ہاتھی تو ہاتھی! ہاتھی کی “ُدم” کے ایک بال کی قیمت بھی ڈالروں میں.

ہنوئی: غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ویت نام میں ہاتھی کی دم کے بال کوخوش بختی کی علامت سمجھا جاتا ہے. ہاتھی کی دم کے ایک بال کو20 امریکی ڈالر میں فروخت کیا جاتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ویت نام کے باسی یہ عقیدہ رکھتے ہیں کہ ہاتھی کی دُم کے بال سے وہ خوش قسمتی اور دولت پا سکتے ہیں. ان میں ایک عام رجحان پایا جاتا ہے کہ جس کے پاس بھی ہاتھی کی دم کا بال ہوگا. قسمت کی دیوی اس پرزیادہ مہربان ہو گی اور وہ زیادہ مال دار ہو جائے گا.

ویت نام میں ہاتھی کی دم کے بال کی خریدو فروخت ایک منافع بخش کاروبار بن چکا ہے کیونکہ وہاں دوسرے جنگلی جانوروں کے اعضا مثلا ہرن کے سینگ، چیتے کے دانت اور ریچھ کی کھال کی اسمگلنگ پر پابندی عائد ہے. اس لیے ایک بال 20 امریکی ڈالر میں فروخت کرنا ویت نامیوں کے لیے منافع بخش کاروبار کا درجہ رکھتا ہے. زیورات کی تیاری میں بھی ہاتھی کی دم کے بال استعمال ہونے لگے ہیں۔

ایک غیر سرکاری تنظیم ’اینیملز ایگا‘ کی رکن دیون سلاگٹر نے ہاتھی کی دم سے بال نکالنے کے عمل کو افسوس ناک قرار دیا ہے. اینیملز ایگا جانوروں کے حقوق کے لیے کام کرنے والی تنظیم ہے. دیون سلاگٹر کا کہنا ہے کہ دم ہاتھی کی جسمانی صفائی کے لیے اہمیت کی حامل ہوتی ہے. دم کو کاٹنے یا اس کے بال نکالنے کی وجہ سے جانور معذور ہوجاتے ہیں۔

این جی او کے مطابق ہاتھی کی زیادہ تر ُدمیں پڑوسی ممالک یا افریقا سے غیر قانونی طور پر اسمگل کی جاتی ہیں. ویت نام میں 80 پالتو اور ایک سو کے قریب جنگلی ہاتھی موجود ہیں۔

فیس بک کے تبصرے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں