7,480

ڈاکٹر عاطف میاں کون ہیں؟ تفصیلی رپورٹ

اسلام آباد: گذشتہ دنوں وزیراعظم عمران خان نے پاکستان کی گرتی ہوئی معیشت کو بہتری کی جانب گامزن کرنے کے لئے ایک اقتصادی مشاورتی کونسل کے قیام کی منظوری دی جس میں حکومتی اور نجی شعبے سے تعلق رکھنے والے قومی اور بین القوامی شہرت یافتہ ماہرین معاشیات کو شامل کیا. ان ماہرین معاشیات میں ایک ڈاکٹر عاطف میاں بھی ہیں جو امریکہ کی پرنسٹن یونیورسٹی میں معاشیات کے پروفیسر ہیں. ڈاکٹر عاطف میاں کے نام کو لیکر اس وقت سوشل میڈیا میں شدید تنقید کی جا رہی ہے.

ڈاکٹر عاطف میاں کون ہیں اور ان پر تنقید کی وجہ کیا ہے؟ اس رپورٹ میں ہم آپ کو ڈاکٹر عاطف میاں کے بارے میں تفصیل سے بتائیں گے.
ڈاکٹر عاطف میاں احمدی یا قادیانی مذہب کے پیروکار ایک پاکستانی امریکن ہیں جو کہ امریکہ کی پرنسٹن یونیورسٹی میں معاشیات کے شعبے کے پروفیسر ہونے کے ساتھ عالمی سطح پر جانے پہچانے ماہر معاشیات ہیں. انہیں 2014 میں دنیا کے 25 بہترین ماہرین معاشیات میں شامل کیا گیا.

یہ بھی پڑھیں: باپ کا بیٹی کوسیلوٹ!

بین الاقوامی مالیاتی ادارے آئی ایم ایف کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر عاطف میاں ان ماہرین معاشیات میں شامل ہیں جو مستقبل میں عالمی معیشت کا دھارا موڑنے کی صلاحیت رکھتے ہیں. وہ مشہور زمانہ کتاب House of Debt کے مصنف بھی ہیں.

وہ قرض اور بین الاقوامی معیشت پر اس کے اثرات کے موضوع پر ماہر شمار کئے جاتے ہیں. ڈاکٹر عاطف میاں 1975 میں پیدا ہوئے. انہوں نے ایم آئی ٹی سے 1996 میں گریجوایشن کی جب کہ 2001 میں Massachusetts Institute of Technology سے ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کی. 2001 سے 2009 تک وہ یونیورسٹی آف شکاگو سے بطور استاد وابستہ رہے.

عاطف میاں 2009 سے 2012 تک یونیورسٹی آف کیلی فورنیا میں پڑھاتے رہےاور 2012 سے پرنسٹن یونیورسٹی کے ساتھ وابستہ ہیں. ڈاکٹر عاطف میاں کا زکر پاکستانی میڈیا میں سب سے پہلے اس وقت آیا جب 2014 کے اسلام آباد دھرنے میں چئیرمین تحریک انصاف عمران خان نے ان کی تعریف کی اور ملکی معیشت کو بہتر بنانے کے لئے ان جیسے لوگوں سے فائدہ اٹھانے کی بات کی.

اس وقت بھی عمران خان پر مذہبی اور عوامی حلقوں کی جانب سے شدید تنقید کی گئی تھی تاہم بعد میں انہوں نے ایک انٹرویو میں ڈاکٹر عاطف میاں کے قادیانی ہونے کے بارے میں لا علمی کا اظہار کیا تھا اور کہا تھا کہ وہ نہیں جانتے تھے کے ڈاکٹر عاطف میاں قادیانی ہیں.

حکومت میں آنے کے بعد ایک بار پھر عمران خان نے اقتصادی مشاورتی کونسل میں ڈاکٹر عاطف میاں کا نام شامل کیا ہے اور ایک بار پھر سوشل میڈیا میں عمران خان کے اس فیصلے شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے.

یہ بھی پڑھیں: بیوی حاصل کرنا کبھی اتنا آسان تو نہ تھا…
سوشل میڈیا میں وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری کی جانب سے ڈاکٹر عاطف میاں کو اقتصادی رابطہ کمیٹی میں شامل کرنے کے حکومتی فیصلے پر توجیح اور اس کے خلاف بولنے والوں کو شدت پسند کہنے پر بھی شدید تنقید سامنے آرہی ہے.

عوامی حلقوں کی جانب سے عمران خان سے مطالبہ کیا جا رہا ہے کہ وہ عاطف میاں کو اقتصادی مشاورتی کونسل میں شامل کر نے کے فیصلے کو واپس لیں تاہم اب تک حکومت اپنے فیصلے پر ڈٹی ہوئی ہے.

کچھ لوگوں کا یہ کہنا بھی ہے کہ عاطف میاں قادیانی مذہب کا مبلغ بھی ہے اور وہ اس حوالے سے عاطف میاں کی ویڈیوز بھی پوسٹ کر رہے ہیں.

فیس بک کے تبصرے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں